ویب سائٹ دفتر رہبر معظم انقلاب اسلامی

سفید الکحل کا استعمال

س: کيا ہاتھ اور طبى آلات جيسے تھرماميٹر و غيرہ کو طبى امور ميں استعمال کرنے کے لئے جراثيم سے پاک کرنے کى غرض سے نيز ڈاکٹر يا ميڈيکل بورڈ کے ذريعہ علاج کى غرض سے سفيد الکحل کا استعمال جائز ہے؟ سفيد الکحل جو طبى الکحل ہے اور پينے کے قابل بھى ہے ۔کيا جس کپڑے پر اس الکحل کا ايک قطرہ يا اس سے زيادہ گرجائے، اس کپڑے ميں نماز جائز ہے؟
ج: وہ الکحل جو در اصل سيال نہ ہو، پاک ہے، اگر چہ نشہ آور ہى ہو اورجس لباس پر يہ لگا ہو اسکے ساتھ نماز صحيح ہے اور اس لباس کو پا ک کرنے کى کوئى ضرورت نہيں ہے ليکن اگر الکحل ايسا ہے جو بذات خود سيال اور ماہرين کى تشخيص کے مطابق مست کرنے والا ہے تو وہ نجس ہے اور اگر يہ بدن يا لباس پر لگ جائے تو نماز کيلئے انہيں پاک کرنا ضرورى ہے ليکن طبى آلات و غيرہ کو جراثيم سے پاک کرنے کيلئے اسکے استعمال ميں کوئى حرج نہيں ہے۔
 
700 /