ویب سائٹ دفتر رہبر معظم انقلاب اسلامی

تازہ بالغ شدہ بچیوں کا روزہ

س: اگر تازه بالغ شده لڑکيوں پر روزہ رکھنا کسى حد تک شاق ہو تو ان کے روزوں کا کيا حکم ہے؟ اور کيا لڑکيوں کے لئے سن بلوغ قمرى حساب سے پورے نو سال ہے ؟
ج: مشہور يہ ہے کہ قمرى نو سال پورے ہونے پر لڑکياں بالغ ہو جاتى ہيں۔ اور اس وقت ان پر روزہ رکھنا واجب ہے اور فقط بعض بہانوں کى وجہ سے ان کے لئے روزہ ترک کرنا جائز نہيں ہے، ليکن اگر روزہ انہيں ضرر پہنچائے يا اس کا تحمل ان کيلئے بہت شاق ہو تو ان کے لئے روزہ نہ رکھنا جائز ہے۔
 
700 /