ویب سائٹ دفتر رہبر معظم انقلاب اسلامی

سر کا مسح بال پر یا جلد پر؟

س: کيا سر کے مسح ميں بالوں کا تر ہوجانا کافى ہے يا ترى کا سر کى جلد تک پہچانا ضرورى ہے ؟
ج: سر کا مسح جلد اور سر کے اگلے حصے کے بالوں پر کرسکتا هے  لیکن اگر کسی کے سر کے دوسرے حصوں کےبال اگلے حصے پر جمع هوں یا اتنے لمبے ہوں کہ چہرے یا  کاندے پر آ گریں تو بالوں پر مسح کافی نهیں هے بلکه ضروری ہے کہ وہ  مانگ نکال کر سر کی جلد یا جڑوں پر مسح کرے۔
 
700 /