ویب سائٹ دفتر رہبر معظم انقلاب اسلامی
دریافت:

روزہ کے احکام

  • روزہ کا معنی
  • روزه کے اقسام
  • روزہ واجب ہونے کی شرایط
  • مہینے کی پہلی تاریخ ثابت ہونے کے طریقے
  • روزہ کی نیت
  • مبطلات روزہ
  • روزہ اور علاج معالجہ کے احکام
  • خواتین کے احکام
  • فطرہ
  • نماز عید فطر
  • قضا روزے
  • استیجاری روزہ
  • روزے کا کفارہ
    • کفارہ کا وجوب اور اس کے موارد
    • کفارہ ادا کرنے کی کیفیت
    • فدیہ اور تأخير کا کفارہ
      پرنٹ  ;  PDF

      فدیہ اور تأخير کا کفارہ

      مدّ میں فقیروں کو کھانا کھلانے کا معیار
      357. علما چار قسم کے لوگوں  کے بارے میں کہتے ہیں کہ وہ لوگ مدّ دیں۔ سن رسیدہ مرد اور اور عورت, جس شخص کو زیادہ پیاس لگتی ہے اور حاملہ یا دودھ پلانے والی عورت, اور بعض علما فرماتے ہیں «لا يجزى الاشباع عن المدَ في الفدية» یعنی فقیر کو پیٹ بھر کے کھانا کھلانا کافی نہیں بلکہ ایک مدّ  طعام فقیر کو دینا چاہئے۔اور اسیطرح سے سورہ بقرہ کی آیہ نمبر 184 میں «فدية طعام مسكين» ذکر ہوا ہے نہ اطعا  م مسکین, اس حوالے سے آپ کی کیا رأی ہے؟
      ج۔ جو لوگ ماه رمضان میں روزہ افطار کرنے کے مجاز ہیں انکو ہر دن کے بدلے فدیہ دینا چاہئےاور ان موارد میں صرف فقیر کا پیٹ بھر کر کھلانا کافی نہیں ہے بلکہ ہر فقیر کو ایک مدّ  طعام دیدے.

      حاملہ یا دودھ پلانے والی عورت کا کفارہ اور فدیہ میں تاخیر کرنا
      358. اللہ کے لطف سے میرا ایک شیرخوار بچہ ہے اور ان شا اللہ ماہ رمضان پہنچ رہا ہے اسوقت میں روزہ رکھ سکتی ہوں لیکن روزہ رکھنے سے میرا دودھ خشک ہوجائے گا چونکہ میں خود کمزور ہوں اور بچہ ہر دس منٹ بعد دودھ مانگتاہے, میرے لئے کیا حکم ہے؟
      ج۔ اگر روزہ رکھنے کی وجہ سے دودھ کم ہونے سے بچے کو ضرر پہنچنے کا ڈر ہو تو روزہ افطار کرے لیکن ہر دن کے بدلے ایک مدّ  طعام فقیر کو دے اور بعد میں قضا بھی بجا لائے.

      359. جو عورت بچے کو دودھ پلاتی ہے اگر اسے روزہ مضر ہو تو کیا روزہ  نہ رکھے تو اس پر کفارہ بھی واجب ہوگا؟ یا نہیں۔
      ج۔ اگر بچے کو ضرر پہنچنے کا ڈر ہو تو جتنے دن روزہ نہیں رکھی ہے ہر دن کے بدلے میں ایک مدّ  طعام فقیر کو(تقریبا 750 گرام  گندم, یا روٹی یا چاول یا ان جیسی دیگر چیزیں ) دیدے اور روزے کی قضا بھی بجا لائے۔لیکن اگر خود اس کو ضرر پہنچنے کا خوف ہو تو مریض کے حکم میں ہے.

      360. اگر کوئی حاملہ عورت خود یا بچے کو ضرر پہنچنے کے ڈر سے روزہ نہ رکھے اور یہ عذر اگلے ماہ رمضان تک باقی رہے تو کیا ہر دن کے لئے دو فدیہ دینا اس پر واجب ہے یا ایک کافی ہے؟
      ج۔ اگر عذر اگلے سال تک باقی رہے تو ایک فدیہ سے زیادہ واجب نہیں ہے.

      361. ایک عورت دو سال مسلسل ماہ رمضان میں  حاملہ ہوئی جس کی وجہ سے ان دنوں  روزہ نہیں رکھ سکی تھی اب وہ روزہ رکھنے پر قادر ہے۔ اس کے روزوں کا کیا حکم ہے؟ کیا اس پر کفارہ جمع واجب ہے یا صرف قضا واجب ہے اور اس نے جو تاخیر کی ہے اس کا حکم کیا ہے؟
      ج۔ اگر عذر شرعی کی وجہ سے ماہ رمضان کے روزے ترک ہوئے ہیں تو اس پر صرف قضا واجب ہے۔ اور اگر افطار کی وجہ یہ تھی کہ روزے سے حمل یا بچے کو ضرر پہنچنے کا ڈر تھا تو ایسی صورت میں قضا کے ساتھ ہر روزے کے بدلے ایک مدّ طعام بھی فقیر کو دینا ہو گا۔ اگر قضا روزوں کو کسی شرعی عذر کے بغیر ماہ رمضان کے بعد سے اگلے ماہ رمضان تک تاخیر کرے تو ایک اور فدیہ بھی اس پر واجب ہوگا یعنی ہر دن کے بدلے ایک مدّ  طعام کسی فقیر کو دینا ہوگ.

      362. جس عورت کا وضع حمل کا وقت قریب ہو  اور وہ روزہ نہیں رکھ سکتی ہے اور جانتی ہے کہ وضع حمل کے بعد اگلے ماہ رمضان سے پہلے انکی قضا کرنا ہے , اگر جان بوجھ کر یا بغیر عمد کے کئی سال تک تاخیر کرے تو کیا اسی سال میں تاخیر کرنے کا کفارہ اس پر واجب ہے یا  بعد والے باقی سالوں میں تاخیر کرنے کا بھی کفارہ واجب ہے؟
      ج۔قضا روزوں کی تاخیر کرنے کافدیہ اگرچہ کئی سال بھی تاخیر کرے صرف ایک بار واجب ہوتا ہے یعنی ہر روزے کے بدلے میں ایک مدّ  طعام, اور فدیہ بھی اس صورت میں واجب ہوتا ہے کہ ماہ رمضان کے قضا روزوں کی تاخیر اگلے ماہ رمضان تک کوتاہی اور بغیر عذر شرعی کے ہو لیکن اگر کسی عذر کی وجہ سے ہو جو شرعی طور پر روزہ صحیح ہونے کے لئے مانع ہو تو اس صورت میں فدیہ نہیں ہے.

      ماہ رمضان سے اگلے ماہ رمضان تک سفر جاری رہنا
      363. جو لوگ ماہ رمضان میں دینی وظیفہ انجام دینے کے لئے سفر پر ہیں اور اسی وجہ سے روزہ نہیں رکھ سکتے ہیں اب اگر کئی سال کی تاخیر کے بعد روزہ رکھنا چاہیں, تو کیا کفارہ ان پر واجب ہے؟
      ج۔ اگر   روزہ  کے لئے مانع بننے والی عذر  کی وجہ سےقضا روزے اگلے ماہ رمضان تک تاخیر ہوجائے تو روزوں کی قضا کافی ہے اور ہر دن کے لئے ایک مدّ  طعام لازم نہیں ہے۔ اگرچہ احتیاط یہ ہے کہ فدیہ اور قضا دونوں کو انجام دے۔لیکن اگر قضا روزوں کی تاخیر کوتاہی کی وجہ سے ہو اور کوئی عذر نہ ہو تو قضا اور فدیہ دونوں واجب ہیں.

      مریض کے روزوں کا کفارہ
      364. میں تقریبا تین سال سے  بیماری اور گولیاں کھانے کی وجہ سے روزہ نہیں رکھتا تھا اور اسی وجہ سے قضا بھی نہیں رکھ سکتا تھا اور فدیہ بھی نہیں دیا ہے۔ لیکن اس سال الحمد للہ ٹھیک ہوگیا ہوں اور فدیہ بھی دے سکتا ہوں۔ اس لئے یہ جاننا چاہتا ہوں کہ ان تین سالوں کی نسبت میری کیا ذمہ داری بنتی ہے؟ ( اور قابل غور بات یه هے کہ پہلے باپ کے کفالت میں تھالیکن 1384 کے آغاز سے کسی کمپنی میں روزگار ملی ہے)
      ج۔ ماہ رمضان کے جو روزے بیماری کی وجہ سے نہیں رکھے ہیں اور اگلے سال تک بیماری  باقی رہی ہو تو ہر دن کے لئے ایک مدّ ( تقریبا 750 گرام)  طعام کسی فقیر کو فدیہ دے  اور ان روزوں کی قضا واجب نہیں ہے سوای آخری ماہ رمضان کے جب  بیماری ٹھیک ہوجائے اور قضا روزے رکھنے کی قدرت حاصل ہوجائے  لیکن اگلے رمضان تک قضا روزے نہ رکھے تو اس صورت میں مدّ دینے کے علاوہ قضا بھی واجب ہے.

      365. میری والدہ  تقریبا تیرہ سال سے مریض تھی اورمجھے یاد ہے کہ  دوائی کھانے کی وجہ سے  روزہ نہیں رکھ سکتی تھی , کیا ان کے روزوں کی قضا واجب ہے  ؟امید ہے کہ آپ ہماری راہنمائی فرماینگے۔
      ج۔ اگر بیماری  کی وجہ سے روزہ نہیں رکھ سکی ہیں تو ان روزوں کی قضا نہیں ہے.

      366. جو شخص بیماری کی وجہ سے ماہ رمضان کے روزے اور انکی قضا کو انجام نہیں دے سکا ہے تو اس کے لئے کیا حکم ہے؟
      ج۔ جس سال ٹھیک ہوا ہے اگر اگلے ماہ رمضان تک اتنی مقدار میں وقت ہو جسمیں وہ آخری سال کے قضا روزے رکھ سکے تو قضا بجا لائے۔ لیکن گزشتہ سالوں کی قضا واجب نہیں ہےاور ہر دن کے بدلے ایک مدّ  طعام فقیر کو دے.

      روزہ رکھنے سے آنکھوں کے ڈاکٹر کا منع کرنا
      367. میں طبی عینک استعمال کرتا ہوں اور اب بھی میری نظر بہت کمزور ہے, اور ڈاکٹر کہتا ہے کہ اگر نظر کی تقویت کیلئے کوشش نہ کرے تو اور زیادہ کمزور ہوسکتی ہے, اس لئے اگر ماہ رمضان کے روزے رکھنے سے معذور ہوں تو میری کیا ذمہ داری بنتی ہے؟
      ج۔ اگر روزہ رکھنا آنکھوں کے لئے مضر ہو تو روزہ رکھنا واجب نہیں , بلکہ نہ رکھنا واجب ہےاور اگر آپکی بیماری اگلے ماہ رمضان تک طول پکڑے تو روزوں کی قضا واجب نہیں ہے لیکن ہر دن کے بدلے ایک مدّ طعام فقیر کو دینا واجب ہے.

      فدیہ دینے میں تاخیر
      368. اگر کوئی شخص کئی سال تک فدیہ نہ دے تو فدیے میں کوئی اضافہ  ہوتا ہے؟
      ج۔ نہیں, کوئی چیز اضافہ نہیں ہوتی.

      بیوی کا مدّ دینے کا ذمہ دار
      369. ایک عورت بیماری کی وجہ سے روزہ نہیں رکھ سکتی ہے اوراگلے سال کے ماہ رمضان تک قضا کو بھی انجام نہیں دے سکتی ہے تو اس صورت میں اسکا کفارہ خود پر واجب ہے  یا اس کے شوہر پر؟
      ج۔ اگر بیماری کی وجه سے روزہ نہیں رکھ سکی ہے اور قضا کی تاخیر بھی بیماری کے باقی رہنے کی وجہ سے ہو تو ہر دن کے بدلے ایک مدّ  طعام فدیہ کے طور پر دینا عورت پر واجب ہے اور شوہر پر کوئی چیز واجب نہیں.
    • روزے کے کفارہ کا مصرف
700 /