ویب سائٹ دفتر رہبر معظم انقلاب اسلامی
دریافت:

استفتاآت کے جوابات

  • تقلید
  • طہا رت
  • احکام نماز
  • احکام روزہ
  • کتاب خمس
  • جہاد
  • امر بالمعروف و نہی عن المنکر
  • حرام معاملات
  • شطرنج اور آلات قمار
  • موسیقی اور غنا
  • رقص
  • تالی بجانا
  • نامحرم کی تصویر اور فلم
  • ڈش ا نٹینا
  • تھیٹر اور سینما
  • مصوری اور مجسمہ سازی
  • جادو، شعبدہ بازی اور روح و جن کا حاضر کرنا
  • قسمت آزمائی
  • رشوت
  • طبی مسائل
  • تعلیم و تعلم اور ان کے آداب
  • حقِ طباعت ، تالیف اور ہنر
  • غیر مسلموں کے ساتھ تجارت
  • ظالم حکومت میں کام کرنا
  • لباس کے احکام
  • مغربی ثقافت کی پیروی
  • جاسوسی، چغلخوری اور اسرار کا فاش کرنا
  • سگریٹ نوشی اور نشہ آور اشیاء کا استعمال
  • داڑھی مونڈنا
  • محفل گناہ میں شرکت کرنا
  • دعا لکھنا اور استخارہ
  • دینی رسومات کا احیاء
  • ذخیرہ اندوزی اور اسراف
  • تجارت و معاملات
    • شرائطِ عقد
    • خرید ار اور فروخت کرنے والے کے شرائط
      پرنٹ  ;  PDF
       
      خریدار اور فروخت کرنے والے کے شرائط
       
      س١٤75:اگر کسی شخص کو حکومت یا حاکم شرع کے حکم سے اپنی زمین یا گھر کے سامان کو فروخت کرنے پر مجبور کیا جائے تو آیا ایسے شخص کے لئے جو یہ جانتا ہے کہ وہ فروخت کرنے پر مجبور ہے مذکورہ اشیاء خریدنا جائز ہے؟
      ج: اگر زمین اور گھر کا سامان فروخت کرنے کیلئے مجبور کرنا برحق ہو اور مجبور کرنے والا شرعاً حق اجبار رکھتا ہو تو اس صورت میں دوسروں کے لئے مذکورہ اشیاء خریدنا جائز ہے۔ وگرنہ یہ اس بات پر موقوف ہے کہ معاملہ کے بعد وہ اس کی اجازت دے۔
       
      س١٤76:زید نے عَمر کو اپنی پراپرٹی فروخت کرکے قیمت وصول کر لی۔ اس کے بعد عمرنے وہی پراپرٹی خالد کو فروخت کر دی اور قیمت وصول کرکے اسے اپنی ضروریات میں خرچ کر لیا اس کے بعد زیدکو اپنے مال میں ممنوع التصرف قرار دے دیا گیا اور اس کے مال کو قرق کردیاگیا ۔ آیا مذکورہ حکم اس پراپرٹی پربھی جاری ہوگا جو اس نے ممنوع التصرف ہونے سے پہلے فروخت کر دی تھی؟ اور اس سے منکشف ہو گا کہ اس کا فروخت کرنا باطل تھا؟
      ج: اگر ثابت ہو جائے کہ حاکم (شرع) کی طرف سے اسکے اموال کو قرق کرنے کی وجہ سے یہ فروخت کرنے والا بیچنے کے وقت ممنوع التصرف تھا، یا مال ہاتھ میں ہونے کے باوجود وہ مال کا مالک نہیں تھا بلکہ یہ مال ایساتھا کہ جسے حاکم کو قرق کرنے کا حق تھا تو اس صورت میں قرق کا وہ حکم جو اسکے بیچنے کے بعد آیا ہے مذکورہ مال کو بھی شامل ہوگا اور حاکم کے حکم سے پہلے ہونے والی بیع کے بھی بطلان کا حکم لگایا جائیگا۔ مذکورہ صورت کے علاوہ قرق کا بعد والا حکم سابقہ فروخت کو شامل نہیں ہوگا۔ لہذا وہ صحیح ہے۔
       
      س١٤٧7:معاشرتی تعلقات کی پیچیدگی اور لوگوں کی اقتصادی اور معاشرتی مشکلات بعض اوقات انہیں ایسے معاملات انجام دینے پر مجبور کر دیتی ہیں جو غیر عادلانہ، مضر یا کم از کم عرفاً قابل مذمت ہوتے ہیں۔آیا مذکورہ اضطرار شرعی لحاظ سے معاملات کے باطل ہونے کا سبب ہے یانہیں؟
      ج: فقہی لحاظ سے رضا اوردلی رغبت کے ساتھ جو معاملہ انجام دیا جائے اسکے صحیح و نافذ ہونے کو اضطرار نقصان نہیں پہنچاتا چاہے وہ معاملہ خرید و فروش کا ہو یا کوئی اور لیکن اخلاقی اور انسانی لحاظ سے معاملہ کی دوسری طرف پر یہ فرض ہے کہ وہ مضطر کو پیش آنے والے حالات سے سوء استفادہ نہ کرے۔
    • بیع فضولی
    • اولياء تصرّف
    • خرید و فروخت میں شے اور اسکے عوض کے شرائط
    • عقد کے ضمن میں شرط
    • خريد و فروخت کے متفرقہ احکام
    • احکام خيارات
    • مبیع ( بیچی گئی چیز) کے توابع
    • مبیع کو سپرد کرنا اور قیمت ادا کرنا
    • نقد اورادھار خرید و فروخت
    • بیع سَلَفْ
    • سونے چاندی اور کرنسی کی خرید و فروخت
    • تجارت کے متفرقہ مسائل
  • سود کے احکام
  • حقِ شفعہ
  • اجارہ
  • ضمانت
  • رہن
  • شراکت
  • دین و قرض
  • صلح
  • وکالت
  • صدقہ
  • عاریہ اور ودیعہ
  • وصیّت
  • غصب
  • بالغ ہونے کے علائم اور حَجر
  • مضاربہ
  • بینک
  • بیمہ (انشورنس)
  • سرکاری اموال
  • وقف
  • قبرستان کے احکام
700 /