ویب سائٹ دفتر رہبر معظم انقلاب اسلامی
دریافت:

استفتاآت کے جوابات

  • تقلید
  • طہا رت
  • احکام نماز
  • احکام روزہ
  • کتاب خمس
    • ہبہ ، ہديہ ، بينک سے ملنے والا انعام ، مہر اور وراثت
    • قرض، تنخواہ، انشورنس اور پنشن
    • گھر، گاڑیوں وغیرہ اور اراضی کی فروخت
    • دفینہ ، معدنیات اور وہ حلال مال جو حرام سے مخلوط ہوجائے
    • اخراجات(موؤنہ)
    • دست گردانی اور خمس کا غیر خمس کے ساتھ مخلوط ہونا
    • سرمایہ
    • خمس کے حساب کا طريقہ
    • مالى سال کا تعين
    • ولی امر خمس
    • سادات اور ان کی طرف انتساب
      پرنٹ  ;  PDF
       
      سادات اور ان کی طرف انتساب
       
      س١٠٠۹:میری والدہ سیدہ ہیں، لہذا مندرجہ ذیل سوالات کے جواب بیان فرمائیں؟
      ١۔ کیا میں سید ہوں؟
      ٢۔ کیا میری اولاد اور میرے پوتے پر پوتے وغیرہ سید ہوں گے؟
      ٣۔ وہ شخص جو باپ کی طرف سے سید ہے اور جو ماں کی طرف سے سید ہے ان میں کیا فرق ہے؟
      ج: سیادت کے شرعی آثا راور احکام شرعیہ کے مترتب ہونے کا معیار یہ ہے کہ سید کی نسبت باپ کی طرف سے ہو، اگر چہ ماں کی طرف سے رسول اکرمۖ سے منسوب ہونے والے بھی اولاد رسول اکرم ۖ میں سے ہیں۔
       
      س١٠۱۰: کیا جناب عباس ابن علی کی اولاد کے احکام بھی وہی ہیں جو باقی سادات کے ہیں، مثلا جو طلاب علم اس سلسلے سے منسوب ہیں کیا وہ سادات کا لباس پہن سکتے ہیں؟ اور کیا اولاد عقیل ابن ابی طالب کا بھی یہی حکم ہے؟
      ج: جو شخص باپ کی طرف سے جناب عباس ابن علی ابن ابیطالب سے نسبت رکھتا ہو وہ علوی سید ہے اور سارے علوی اور عقیلی سادات ہاشمی سادات میں سے ہیں، لہذا ہاشمی سادات کی خاص مراعات سے استفادہ کرسکتے ہیں۔
       
      س١٠۱۱: پچھلے دنوں میں نے اپنے والد کے ایک چچا زاد بھائی کا ذاتی وثیقہ دیکھا ہے کہ جس میں ان کے نام کے ساتھ سید لکھا ہے، لہذا اس بات کو پیش نظر رکھتے ہوئے کہ اپنے رشتہ داروں میں ہم سید مشہور ہیں اور جو وثیقہ مجھے ملا ہے وہ بھی اس بات کا قرینہ ہے، میرے سید ہونے کے بارے میں آپ کی کیا رائے ہے؟
      ج: آپ کے کسی نسبی رشتہ دار کا اس قسم کا وثیقہ، آپ کے سید ہونے کے لئے شرعی دلیل نہیں بن سکتا، لہذا جب تک آپ کو سید ہونے کا اطمینان یا اس کے بارے میں آپ کے پاس کوئی شرعی دلیل نہ ہو آپ پر سیادت کے شرعی احکام اور آثار مترتب نہیں ہوں گے۔
       
      س١٠۱۲: میں نے ایک بچے کو اپنا بیٹا بنایاہے اور اس کا نام علی رکھاہے۔ جب اس کا شناختی کارڈ لینے کیلئے رجسٹریشن آفس گیا تو ان لوگوں نے میرے اس گود لئے بیٹے کو"سید"کا لقب دے دیا، لیکن میں نے اسے قبول نہیں کیا، کیونکہ اپنے جد رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے ڈرتا ہوں۔ اب میں مردد ہوں یا تو اسے متبنٰی نہ کروں اور یا اس گناہ کا مرتکب ہو جاؤ ں اورجو سید نہیں ہے اس کے سید ہونے کو قبول کرلوں۔ اب میں کونسا راستہ اختیار کروں؟ براہ مہربانی میری راہنمائی فرمائیں؟
      ج: گود لئے بیٹے پر بیٹے کے شرعی آثار مترتب نہیں ہوتے اور جو حقیقی باپ کی طرف سے سید نہ ہو اس پر سید کے احکام و آثار جاری نہیں ہوتے، بہرحال بے سرپرست بچے کی کفالت کرنا نہایت مستحسن اور شرعاً پسندیدہ عمل ہے۔
    • خمس کے مصارف، اجازہ، ہديہ اور حوزہ علميہ کا وظيفہ
    • خمس کے متفرق مسائل
    • انفال
  • جہاد
  • امر بالمعروف و نہی عن المنکر
  • حرام معاملات
  • شطرنج اور آلات قمار
  • موسیقی اور غنا
  • رقص
  • تالی بجانا
  • نامحرم کی تصویر اور فلم
  • ڈش ا نٹینا
  • تھیٹر اور سینما
  • مصوری اور مجسمہ سازی
  • جادو، شعبدہ بازی اور روح و جن کا حاضر کرنا
  • قسمت آزمائی
  • رشوت
  • طبی مسائل
  • تعلیم و تعلم اور ان کے آداب
  • حقِ طباعت ، تالیف اور ہنر
  • غیر مسلموں کے ساتھ تجارت
  • ظالم حکومت میں کام کرنا
  • لباس کے احکام
  • مغربی ثقافت کی پیروی
  • جاسوسی، چغلخوری اور اسرار کا فاش کرنا
  • سگریٹ نوشی اور نشہ آور اشیاء کا استعمال
  • داڑھی مونڈنا
  • محفل گناہ میں شرکت کرنا
  • دعا لکھنا اور استخارہ
  • دینی رسومات کا احیاء
  • ذخیرہ اندوزی اور اسراف
  • تجارت و معاملات
  • سود کے احکام
  • حقِ شفعہ
  • اجارہ
  • ضمانت
  • رہن
  • شراکت
  • دین و قرض
  • صلح
  • وکالت
  • صدقہ
  • عاریہ اور ودیعہ
  • وصیّت
  • غصب
  • بالغ ہونے کے علائم اور حَجر
  • مضاربہ
  • بینک
  • بیمہ (انشورنس)
  • سرکاری اموال
  • وقف
  • قبرستان کے احکام
700 /